Install Our Mobile App: Android iPhone

محدّث العَصر حَافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ

العربية | English

Hafiz Zubair Alizai Rahimahullah

حافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ 25 جون 1957 کو صوبہ پنجاب ضلع اٹک کی ایک سرسبز وادی، وادی چھچھ میں پید۱ ہوئے۔

آپ لکھتے ہیں: ’’اصل نام محمد زبیر اور تحریر و تقریر کی دنیا میں عرفی نام زبیرعلی زئی ہے، تکمیلِ حفظِ قرآن کی سعادت کے بعد اب عرفی نام حافظ زبیر علی زئی ہے۔ والحمدللہ‘‘ دیکھئے تحقیقی و علمی مقالات جلد 4 صفحہ 541

ایک دوسرے مقام پر لکھتے ہیں: ’’اور حال یہ ہے کہ وہ میرے نام سے بالکل بے خبر ہیں۔ میرا نام محمد زبیر ہے اور قبیلہ علی زئی۔۔۔‘‘ دیکھئے تحقیقی و علمی مقالات جلد 2 صفحہ 336

جامعہ امام بخاری، مقام حیات سرگودھا میں سنن ابی داود کی ایک حدیث (738) کے درس کے دوران ایک کتاب کے بارے میں فرمایا کہ ’’ابو معاذ الشاشی کی کتاب ہے‘‘۔ مزید فرمایا کہ ’’میرا نام زبیر علی زئی ہے اور معاذ میرا بیٹا ہے۔ چھچھ ہمارا علاقہ ہے۔ حضرو کو اصل میں چھچھ کہتے ہیں۔‘‘

تعلیم

آپ نے ابتدائی تعلیم اپنے گاؤں پیرداد میں حاصل کی۔ بعد ازاں گورنمنٹ ڈگری کالج اٹک سے گریجوایشن کا امتحان اعلی نمبروں سے پاس کیا۔

آپ نے پنجاب یونیورسٹی لاہور سے اسلامیات اور عربی میں دو مرتبہ ماسٹرز کا امتحان پاس کیا۔ (حوالہ)

آپ نے اسلامی تعلیم جامعہ محمدیہ گوجرانولہ اور وفاق المدارس السلفیہ فیصل آباد سے حاصل کی۔ (حوالہ)

آپ تقریبا 90 دنوں میں قرآن حفظ کرچکے تھے۔

خاندان

آپ کا تعلق ایک پٹھان خاندان "علی زئی" سے تھا۔

آپ کی شادی 1982 میں ہوئی تھی۔ آپ کے تین بیٹے اور چار بیٹیاں ہیں۔ بچے بترتیب طاہر، عبد اللہ ثاقب اور معاذ ہیں۔ (حوالہ)

اردو تصانیف

آپ نے "الحدیث" کے نام سے ایک رسالہ جون 2004 میں شروع کیا تھا۔ آپ کے سینکڑوں مضامیں رسالہ الحدیث میں شائع ہو چکے ہیں۔ رسالہ الحدیث آن لائن پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں۔

آپ کی اردو تصانیف: (حوالہ: نورالعینین صفحہ 14)

حافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ کی عربی تصانیف کی لسٹ نورالعینین پر دیکھیں۔ (حوالہ: صفحہ 16)

بعض اساتذہ

(حوالہ: نورالعینین صفحہ 13)

زبانیں

آپ کی مادری زبان "ہندکو" تھی، تاہم آپ کو دیگر چھ (6) زبانوں پربھی عبور حاصل تھا۔ یونانی یا عبرانی واحد زبان تھی جو وہ صرف پڑھ لکھ سکتے تھے، باقی تمام زبانوں میں انھیں بولنے پر دسترس حاصل تھا۔ دیگر زبانیں جو آپ نے سیکھیں: عربی، پشتو، فارسی، انگریزی، یونانی یا عبرانی، اور پنجابی۔

علوم

آپ کو علم اسماء الرجال پر عبور حاصل تھا۔ آپ بلا شک و شبہ حافظِ قرآن کے ساتھ ساتھ حافظِ حدیث بھی تھے۔

زمانہ طالبعلمی

آپ تقریبا 15 یا 16 سال کے تھے جب آپ کو آپ کے سگے چچا نے صحیح بخاری تحفہ دی۔ یہ اسلامی تعلیم کی طرف آپ کا پہلا قدم تھا۔

1980 کے آخر میں جب آپ پاکستان واپس آئے تو دوستوں نے حاجی اللہ دتہ صاحب کے بارے میں بتایا۔ حاجی صاحب کامرہ ایئر بیس سے ہر جمعہ حضرو شہر میں درس دینے آتے تھے۔ حاجی صاحب آپ کے پہلے استاد تھے۔ آپ حاجی صاحب کے مناظروں میں شریک ہوتے، ان سے کتابوں کی صحت کے بارے سوالات کرتے، مسائل پوچھتے۔ غرض یہ کہ (بقول آپ کے) آ پ نے جن شیوخ میں سے سب سے زیادہ علمی فائدہ حاصل کیا، حاجی صاحب ان شیوخ میں سر فہرست تھے۔ (حوالہ: الحدیث 1 صفحہ نمبر 35)

شمارہ مضمون صفحہ

الشیخ المحدث المحقق حافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ تعالیٰ — حیات و آثار

عید میلاد النبی ﷺ ؟؟ — شیخ زبیر علی زئی رحمہ اللہ

کیا صرف محدثین کرام اہل حدیث تھے؟ کیا عوام اہل حدیث نہیں ہے؟

حدیث کی کتابیں پڑھیں، علامہ ناصرالدین البانی رحمہ اللہ کی کتب پڑھیں

تاریخ تدوین حدیث پر مکمل پروگرام

Android App --or-- iPhone/iPad App

IshaatulHadith Hazro © 2020